ہلالِ عید ہماری ہنسی اُڑاتا ہے
  
احمد علی برقیؔ اعظمی


ہلالِ عید ہماری ہنسی اُڑاتا ہے

ہلالِ عید خوشی کا پیام لاتا ہے
دلوں میں جوش و نئے ولولے جگاتا ہے


یہ جشنِ عید ہر اک شخص کو لُبھاتا ہے
یہ ایسا جشن ہے جو دل سے دل ملاتا ہے


یہ جشنِ عید ہے انعام ماہِ رمضاں کا
جو ایک سال میں بس ایک بار آتا ہے


ہمارے تارِ رگِ جاں کو چھیڑ کر یہ جشن
حدیثِ مہر و محبت ہمیں سناتا ہے


نشاط و کیف سے سرشار سب ہیں عید کے دن
یہ سب کے گلشنِ ہستی میں گُل کھلاتا ہے


دیارِ غیر میں ہیں آج جو وہ کہتے ہیں
”ہلالِ عید ہماری ہنسی اُڑاتا ہے“


نہیں ہیں اپنے وطن میں جو ان کو رہ رہ کر
جو اُن سے دور ہیں اُن کا خیال آتا ہے

بقدرِ ظرف ضیافت میں ہیں سبھی مشغول
جسے ہے جو بھی میسر وہی کِھلاتا ہے


جنھیں عزیز ہے جو اُن سے مل کے وہ برقی ہر ایک شخص گلے سے اُنھیں لگاتا ہے

Copyright © 2011-12 www.misgan.org. All Rights Reserved.